;;ہر فرد جان لے اسکی قسمت کا فیصلہ صرف ووٹ سے ہو سکتا ہے،صدرممنون

اسلام آباد (سپیشل رپورٹر+خصوصی نمائندہ ) صدر مملکت ممنون نے کہا ہے کہ معاشرے کا ہر فرد دل وجان سے یہ تسلیم کرلے کہ اس کی قسمت کا فیصلہ صرف اورصرف ووٹ کے ذریعے ہی ہو سکتا ہے۔ اس لیے ضروری ہے کہ انتخابی نظام کو فعال، تیز رفتار اور شفاف بنانے کے علاوہ بچوں کے ذھنوں میں بھی ابتدائی عمر سے ہی ووٹ کا تقدس نقش کر دیا جائے۔ اس مقصد کے لیے اگر تعلیمی نصاب سے مدد لینے کی ضرورت ہو تو وہ بھی لی جائے اور معاشرتی سطح پر جن اقدامات کی ضرورت ہو، وہ بھی بلا جھجھک کیے جائیں۔ انہوں نے یہ بات ووٹروں کے قومی دن کے حوالے سے ایوان صدر میں منعقد ہونے والی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ تقریب میں وفاقی وزیر داخلہ اور چیف الیکشن کمیشن بھی شریک تھے۔صدر ممنون حسین نے کہا کہ آ ج ہم ووٹروں کا قومی دن اس خوشخبری کے ساتھ منا رہے ہیں کہ ہمارا الیکٹورل نظام جدید عہد میں داخل ہو گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ موبائل فون اپلیکیشن کے افتتاح کے بعد پاکستان کا ہر ووٹراس کی مدد سے اپنے ووٹ سے متعلق تمام تر تفصیلات سے آگاہ ہو سکے گا۔انتخابی نظام میں مزید بہتری ، تیز رفتاری اور شفافیت کے لیے بائیو میٹرک اور الیکٹرونک ووٹنگ جیسے تجربات بھی کیے جا چکے ہیں جو اس شعبے کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کر دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی نظام کے تیکنیکی معاملات یقیناًبہت اہم ہیں جنھیں بہتر بنانے کے لیے اسی فکر مندی اور جانفشانی کی ضرورت ہے جس کا پر تو الیکشن کمیشن اور دیگر ریاستی اداروں کی سرگرمیوں میں دکھائی دیتا ہے لیکن یہ امر ضرور پیشِ نظر رہنا چاہیے کہ تیکنیکی نظام اور قانونی ڈھانچہ اس وقت تک بے روح اور بے معنی رہتا ہے جب تک کسی نظام کو اعتبار دینے اور معتبر بنانے کے لیے ٹھوس اقدامات نہ کیے جائیں۔صدر ممنون حسین نے مزید کہا کہ الیکشن کمیشن کے اقدامات سے پتہ چلتا ہے کہ وہ انتخابی عمل کو مزید بہتر بنانے کے لیے سول سوسائٹی سمیت ریاست کے دیگر اداروں سے بھی معاونت حاصل کر رہا ہے۔
صدرممنون