فیصل ٹاﺅن پولیس کو بھی کرکٹرز پر مقدمے کا حکم‘ ایس ایچ او اسلام پورہ کی پھر طلبی‘ آصف کی اوپن جیل منتقلی کا فیصلہ

لاہور + لندن (اپنے نامہ نگار سے+ نوائے وقت نیوز) ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج نے برطانیہ کی عدالت سے سزا پانے والے پاکستانی کرکٹرز کے خلاف تھانہ فیصل ٹاﺅن کو بھی قانونی کارروائی کرنے کا حکم دے دیا۔دریں اثناءایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج نے سزا یافتہ کھلاڑیوں کے خلاف قانونی کارروائی کے عدالتی احکامات پر عملدرآمد نہ کرنے پر دائر توہین عدالت کی ایک اور درخواست میں ایس ایچ او تھانہ اسلام پورہ کو طلبی کے نوٹس جاری کر دئیے ہیں۔ یہ درخواست شہری شفیق بلوچ نے دائر کی تھی۔ ادھر مظہر مجید کے بھائی اظہر مجید نے کہا ہے کہ برطانوی صحافی کو مظہر مجید اور کھلاڑیوں کے پیچھے لگانے والا ٹیم کا ایک ناراض کھلاڑی ہے جس کو کپتان سے نفرت تھی۔ نجی ٹی وی سے گفتگو میں اظہر مجید نے کہا کہ انضمام الحق، محمد یوسف، کامران اکمل، محمد آصف، مشتاق احمد کو جانتا ہوں، ثقلین مشتاق کے ذریعے سب سے دوستی ہوئی، مظہر مجید کا کھلاڑیوں سے رابطہ میری وجہ سے ہوا جبکہ محمد آصف کی مظہر مجید سے ملاقات میرے ذریعے ہوئی۔ سپاٹ فکسنگ کیا ہے، مجھے اس دن پتہ چلا جس دن اخبار میں خبر چھپی، جیسی غلطی میرے بھائی نے کی ویسی کوئی اور نہ کرے، مظہر مجید بہت مذہبی ہے۔ سلمان بٹ کی بہن رباب بٹ نے بی بی سی کو انٹرویو میں کہا ہے کہ سپاٹ فکسنگ واقعہ پر جس طرح میڈیا نے انہیں اور ان کے گھر والوں کو تنگ کیا ہے وہ اذیت ناک ہے۔ برطانوی خاتون وکیل کوئنز قونصلر ہیزی بلیکس لینڈ نے محمد عامر سے دو ملاقاتیں کی ہیں جس میں فیصلے کے خلاف اپیل کیلئے مشاورت کی گئی۔ جی این آئی کے مطابق محمد آصف اگلے ہفتے اوپن جیل منتقل ہو جائیں گے۔ محمد آصف کو وینڈز ورتھ جیل میں اے کیٹگری سے نکال کر آئندہ 6-5 دنوں میں اوپن جیل بھیج دیا جائے گا جہاں زیادہ آزادی اور مراعات حاصل ہونگی، اس کے علاوہ انٹرنیٹ اور تفریح کی دوسری سہولیات بھی میسر ہونگی۔