بدترین لوڈ شیڈنگ جاری‘ لاہور میں مظاہرہ ‘ کراچی میں احتجاج کے دوران تصادم‘ ایک نوجوان مارا گیا

لاہور + کراچی (نیوز رپورٹر+ نامہ نگاران+ وقت نیوز) صوبائی دارالحکومت سمیت ملک بھر میں رمضان المبارک کے دوران بھی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری رہا، شہری علاقوں میں 8سے 10جبکہ دیہات میں 14سے 16گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کی گئی۔ جس پر لوگ سراپا احتجاج بنے رہے، ملک بھر میں بجلی کا شارٹ فال 3300میگاواٹ تک پہنچ گیا جبکہ بجلی کی پیداوار 13ہزار میگاواٹ ہے۔ کئی شہروں میں سحر و افطار اور نماز تراویح کے دوران بھی بجلی غائب رہنے سے روزہ داروں کو شدید مشکلات کا سامناکرنا پڑا جبکہ کئی شہروں میں پانی کی بھی شدید قلت رہی۔ لاہور میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس کے دوران مظاہرین نے ملتان روڈ بلاک کر دی جبکہ کراچی میں لوڈشیڈنگ کے خلاف مظاہرے کے دوران 2گروپوں میں تصادم ہوگیا جس کے نتیجہ میں ایک نوجوان جاں بحق ہو گیا۔ صوبائی دارالحکومت کے علاقہ سوڈیوال میں مسلسل پانچ روز سے بجلی کی بندش سے تنگ عوام ملتان روڈ پر نکل آئے جنہوں نے ٹائروں کو آگ لگا کر ٹریفک کا نظام معطل کر دیا جس سے گاڑیوں کی میلوں لمبی قطاریں لگ گئیں۔ اس موقع پر مظاہرین نے شدید نعرے بازی کی اور تنبیہ کی اگر یہاں پر چار سو کے وی کا ٹرانسفامر نصب نہ کیا گیا تو انتہائی اقدام پر مجبور ہو جائینگے۔ علاوہ ازیں سمن آباد میں بھی بجلی کی طویل بندش کیخلاف شہریوں نے احتجاجی مظاہرہ کیا اور ٹریفک بلاک کردی۔ ڈونگہ بونگہ سے نامہ نگار کے مطابق ڈونگہ بونگہ میں شدید گرمی اور نواحی علاقوں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ 18سے 20گھنٹوں تک پہنچ گیا۔ ملکہ ہانس سے نامہ نگار کے مطابق درجنوں دیہات کے سینکڑوں افراد نے شدید احتجاج کیا اور سرکل روڈ کئی گھنٹے بند رکھی۔ واربرٹن سے نامہ نگار کے مطابق بجلی کی ریکارڈ لوڈشیڈنگ جاری ہے۔ شہریوں کو 24گھنٹے میں صرف چار گھنٹے بجلی فراہم کی جا رہی ہے جبکہ افطار اور سحری کے وقت مکمل طور پر بجلی بند رکھی جا رہی ہے، لوگوں نے الزام لگایا ہے کہ واپڈا کے اہل کار اکثر شہر کی بجلی بند کرکے علاقہ کی فیکٹریوں کو فروخت کر دیتے ہیں۔ ادھر کراچی میں ابوالحسن اصفہانی روڈ پر بجلی کی بندش کے خلاف مظاہرہ ہوا۔ احتجاج دو گروپوں میں تصادم میں تبدیل ہو گیا۔ وقت نیوز کے مطابق تصادم کے نتیجے میں 17سالہ نوجوان مارا گیا۔