نیٹو کی سرحدی خلاف ورزیوں اور ڈرون حملوں کیخلاف جماعت اسلامی کا احتجاج‘ مظاہرے

لاہور (خصوصی نامہ نگار) امیر جماعت اسلامی سید منور حسن کی اپیل پر ملک بھر میں نیٹو فورسز کی جارحیت ‘ پاکستانی فوجی چوکی پر حملے اور ڈرون حملوں کے خلاف یوم احتجاج منایا گیا ۔لاہور ، کراچی ، اسلام آباد ، راولپنڈی، فیصل آباد، خوشاب، جوہرآباد، بہاولپور، پھول نگر، پتوکی اور دیگر شہروں میں جماعت اسلامی کے زیر اہتمام نماز جمعہ کے بعد احتجاجی مظاہرے کئے گئے ۔ جماعت اسلامی کے مرکزی ، صوبائی اور مقامی قائدین نے مظاہرین سے خطاب کیا اور ان حملوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا کہ امریکہ اور نیٹو سے نہ صرف اس پر احتجاج کیا جائے بلکہ آئندہ پاکستانی حدود کی خلاف ورزی کرنے پر نیٹو کے ہیلی کاپٹروں کو مارگرائے نیز نیٹو کی سپلائی لائن فوراً بند کر دی جائے ۔ جامع مسجد منصورہ میں نماز جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے سید منور حسن نے کہا کہ حکمران بزدل ہیں لیکن بزدلوں کی انجمن میں کوئی امریکہ کے خلاف کھڑا ہوا تو ہم اس کی تائید کریں گے اور پاکستان کی اسلامی و جہادی تحریکیں امریکی جارحیت کا مقابلہ کریں گی اور امریکی ڈالروں پر پلنے والے اور امریکی ایجنڈے کو لے کر چلنے والوں کی بھی مزاحمت کی جائے گی۔ امیر جماعت اسلامی نے نیٹو کی سپلائی لائن بند کرنے کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا کہ اسے مستقل طور پر بند ہونا چاہئے۔ ملتان روڈ پر ہونے والے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر فرید احمد پراچہ نے کہا کہ پاکستان واحد ملک ہے جس نے سامراجی قوتوں کو اپنے شہریوں کو قتل کرنے کی اجازت دے رکھی ہے۔ امیرالعظیم نے کہا کہ امریکہ اور اس کے اتحادی افغانستان کے ساتھ پاکستان کو بھی تباہ کرنا چاہتے ہیں۔ حافظ سلمان بٹ نے کہا کہ ڈرون حملے اور سرحدوں کی مسلسل خلاف ورزیاں حکمرانوں کے لئے سیاہ ترین داغ ہیں۔ بعدازاں مظاہرین پرامن منتشر ہو گئے۔ پھول نگر سے نامہ نگار کے مطابق تمام مکاتب فکر کی مساجد میں جمعة المبارک کے خطبات میں خطیبوں نے امریکہ اور نیٹو افواج کی طرف سے پاکستانی سرحدوں کی خلاف ورزی کرنے کی شدید الفاط میں مذمت کی، مذمتی قراردادیں پاس کی گئیں۔ پتوکی سے نامہ نگار کے مطابق نیٹو اور ڈرون حملوں‘ بابری مسجد اور ڈاکٹر عافیہ کے عدالتی فیصلے کے خلاف جماعت اسلامی پتوکی نے مذمتی قراردادیں پیش کیں اور امیر جماعت اسلامی پتوکی میاں فیصل میانہ‘ قاری محمد طیب‘ شاہد اقبال و دیگر نے کہا کہ نیٹو کے حملوں پر حکومت کا مودبانہ احتجاج افسوسناک ہے۔ جے یو آئی کے وزیر اطلاعات مولانا امجد خان نے نیٹو حملوں کی مذمت کی۔ دریں اثناءانصاف سٹوڈنٹس فےڈرےشن لاہور کے صدر حسان نےازی اور جنرل سےکرٹری فرخ حبےب کی قےادت مےں کارکنوں کی پاکستان مےں نےٹو فورسز کی کارروائےوں کے خلاف احتجاجی رےلی نکالی گئی‘ حکومت پاکستان سے امرےکی سفےر کو دفتر خارجہ طلب کرنے اور نٹےو کو سپلائی مستقل بند کرنے کا مطالبہ‘ امرےکہ اور اس کے اتحادےوں کے خلاف شدےد نعرے بازی کی گئی۔رےلی مےں نائب صدر عثمان گجر‘ صدام حسےن‘ وقاص افتخار بٹ‘ مےاں خلےل‘ اشفاق احمد‘ جمشےد جٹ‘ مناسب علی گجر‘ عمےر شوکت سمےت دےگر نے شرکت کی رےلی کے شرکا نے بےنرز اور پلے کارڈ بھی اٹھا رکھے تھے جن پر امرےکہ اور نٹےو فورسز کے خلاف نعرے درج تھے۔ دریں اثناءاہلحدیث یوتھ فورس پاکستان کے صدر حافظ ذاکر الرحمن صدیقی نے نیٹو کی طرف سے پاکستان کی سکیورٹی فورسز کو نشانہ بنانے اور اس کے نتیجے میں شہید ہونے والے سکیورٹی اہلکاروں کی شہادت پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے اسے بین الاقوامی قوانین کی کھلم کھلا خلاف ورزی قرار دیا۔ دریں اثناءنیٹو کے ہیلی کاپٹر کی ہماری فضائی حدود میں مداخلت اور بمباری ڈرون حملوں کی خاموشی سے برداشت کرنے کا نتیجہ ہے۔ یہ بات امیر تنظیم اسلامی حافظ عاکف سعید نے قرآن اکیڈمی میں خطاب جمعہ کے دوران کہی۔ جمعیت علمائے پاکستان کے سیکرٹری جنرل علامہ قاری محمد زوار بہادر نے کہا کہ حکمران دینی اور اسلامی غیرت و حمیت سے تو پہلے ہی خالی تھے مگر اب وہ پاکستان کی جغرافیائی سرحدوں کی حفاظت کے قابل ہی نہیں رہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامعہ محمدیہ رضویہ فردوس مارکیٹ گلبرگ میں ایک بہت بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔