لاہور میں دوسرے روز بھی 7 بڑے گرڈ اسٹیشن بند‘ مسلسل 3 تین گھنٹے لوڈشیڈنگ‘ شہری سراپا احتجاج

لاہور (نیوز رپورٹر+ نمائندگان) بجلی کا خسارہ 4800میگاواٹ تک پہنچ گیا ہے، صوبائی دارالحکومت سمیت کئی شہروں میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ نے شہریوں کا جینا حرام کر دیا ہے، کئی شہروں میں دورانیہ 20گھنٹے تک پہنچ گیا، کاروباری و صنعتی سرگرمیاں ٹھپ ہوکر رہ گئیں، پانی بھی نایاب ہو گیا، مچھروں کی بہتات سے بوڑھوں اور بچوں کی نیندیں حرام ہو گئیں۔ پیپکو ذرائع کے مطابق پیپکو کی تقسیم کار کمپنیوں کے کمزور سسٹم اور ہائیڈل بجلی کی پیداوار میں 2ہزار میگاواٹ کمی کی وجہ سے بجلی کا خسارہ 48 سو میگاواٹ تک پہنچ گیا ہے جس کو پورا کرنے کیلئے 18گھنٹے تک بجلی کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے۔ لاہور کے مختلف علاقوں میں بند رہے۔ اتحاد کالونی، اقبال ٹاﺅن، تاجپورہ سکیم، وحدت کالونی، جوہر ٹاﺅن، گلدشت ٹاﺅن، مزنگ، کوٹ لکھپت، ٹاﺅن شپ، گرین پارک، بند روڈ، شاہدرہ، بادامی باغ، اندرون شہر بھاٹی، لوہاری و اسٹیشن، شادباغ، پاکستان منٹ، گلشن راوی، سمن آباد، جیل روڈ، بیڈن روڈ، میکلوڈ روڈ و دیگر علاقوں میں مسلسل 3-3گھنٹے تک بجلی بند کی گئی۔ شہریوں نے اس صورت حال پر شدید احتجاج کیا۔پوش علاقے ماڈل ٹاﺅن، ٹاﺅن شپ اور گارڈن ٹاﺅن کے رہائشیوں نے فون پر بتایا کہ گذشتہ شام ساڑھے سات بجے سے ساڑھے دس بجے تک مسلسل بجلی بند رہی۔ لیسکو عملہ کوئی جواب نہیں دیتا۔ شہری علاقوں میں 5-5اور دیہی علاقوں میں 8-8گھنٹے کی مسلسل لوڈشیڈنگ کے خلاف مختلف علاقوں میں شہریوں نے حکومت اور فیسکو کے خلاف شدید ترین احتجاج کیا اور روڈ بلاک کرکے ٹائر جلائے۔ شہریوں نے شدید احتجاج کرتے ہوئے وفاقی اور پنجاب حکومت کے خلاف نعرہ بازی کرتے ہوئے کہاکہ بجلی کی ظالمانہ لوڈشیڈنگ صرف پنجاب کا مقدر کیوں ہے۔گوجرانوالہ سے نمائندہ خصوصی کے مطابق بجلی کی قیمتوں میں مسلسل اضافے کے باوجود لوڈشیڈنگ کا ”عذاب“ ختم نہ ہو سکا، شہر کے شمالی علاقوں میں مسلسل 13گھنٹے بجلی کی فراہمی معطل رہی، جس باعث شہری بلبلا اٹھے، تھیٹری سانسی، دھلے، باغبانپورہ، نوشہرہ روڈ، گرجاکھ، راجکوٹ، سوئی گیس روڈ، فتو منڈ، سول لائن، شاہین آباد سمیت دیگر جگہوں میں بجلی کی بندش کا سلسلہ جاری ہے۔ نامہ نگاران کے مطابق قلعہ دیدار سنگھ میں دورانیہ 18گھنٹے ہو گیا، ہر 2گھنٹے بعد 3گھنٹے مسلسل بجلی بند رکھی جا رہی ہے۔ فاروق آباد میں صبح 4سے 8بجے اور رات 8سے 10بجے مسلسل بجلی بند رہنے سے نمازیوں اور بچوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ نارنگ منڈی میں 18گھنٹے کی لوڈشیڈنگ پر علماءنے خطبات جمعہ میں احتجاج کیا۔ بدوملہی میں 16گھنٹے تک جبکہ وقفے وقفے سے 2سے 3گھنٹے مسلسل بجلی بند کی جا رہی ہے۔ خانقاہ ڈوگراں میں غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ اور اووربلنگ پر شہری سراپا احتجاج بن گئے۔ شاہ کوٹ میں بھی زائد بل بھجوائے گئے ہیں۔