ملک ریاض کے بیرون ملک جانے پر ڈی جی ایف آئی اے کو توہین عدالت کا نوٹس


اسلام آباد (آئی این پی) سپریم کورٹ کے حکم پر ارسلان افتخار کیس کی سماعت کرنے والے سڈل کمیشن نے بحریہ ٹاﺅن کے ملک ریاض کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل نہ کرنے اور ملک ریاض کے بیرون ملک چلے جانے پر ڈائریکٹر جنرل ایف آئی اے کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا جبکہ موجودہ صورتحال میں لندن سے ملک ریاض کی وطن واپسی بھی سوالیہ نشان بن گئی ہے۔ کمیشن کے ذرائع کے مطابق ڈاکٹر شعیب سڈل پر مشتمل تحقیقاتی کمیشن نے وزارت داخلہ کو بحریہ ٹاﺅن کے سابق چیئرمین ملک ریاض حسین اور ڈاکٹر ارسلان افتخار کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کرنے کا حکم دیا تھا لیکن ان احکامات کے باوجود ملک ریاض لندن جانے میں کامیاب ہوگئے جس پر سڈل کمیشن نے مذکورہ حکم پر عملدرآمد نہ کرنے پر ذمہ دار ڈی جی ایف آئی اے کو قرار دیا ہے ۔ ذرائع کے مطابق کمیشن نے ارسلان افتخار سکینڈل کی تحقیقات کرنے والے ایف آئی اے کے دو سینئر افسروں شاہد ندیم بلوچ اور فرانزک ایکسپرٹ محمد اکرم جن کی خدمات کمیشن نے حاصل کی تھیں ان کا راتوں رات تبادلہ کرنے پر بھی ڈائریکٹر جنرل ایف آئی اے کو علیحدہ سے توہین عدالت کا شوکاز نوٹس جاری کیا ہے ۔