محتسب پنجاب نے جی پی فنڈز پر منافع میں ناانصافی ختم کرنیکا حکم دیدیا


لاہور (خبر نگار) محتسب پنجاب خالد محمود نے حکم دیا ہے کہ ملازمین کے جی پی فنڈز کی رقوم جتنے عرصے تک حکومتی خزانے میں جمع رہے، ادائیگی کے وقت اتنے عرصے کا منافع بھی ملازمین کو دیا جا ئے۔ سرکاری ملازمین کو کسی بھی وجہ سے جی پی فنڈ کی تاخیر سے ادائیگی پر انہیں محض ریٹائرمنٹ یا تاریخ وفات تک کا منافع دینا نہ تو کسی طور پرقرین انصاف ہے نہ ہی آئین میں درج عدل، برابری اور عدم امتیازکے اصولوں کے مطابق ہے۔ محتسب پنجاب نے اکاو¿نٹنٹ جنرل پنجاب اور پنجاب حکومت کو حکم دیا ہے کہ وہ اکاو¿نٹس کے تمام ضلعی دفاتر کو واضح ہدایات جاری کریں کہ سرکاری ملازمین کوجی پی فنڈکی تاخیر سے ادائیگی کی صورت میں اس وقت تک کا منافع شامل کرکے رقوم ادا کی جائیں۔ گوجرانوالہ کے ریٹائرڈ سینئر ہیڈ ماسٹر فتح محمد نے محتسب پنجاب کو درخواست دی کہ وہ 2006 میں ریٹائر ہوئے لیکن جی پی فنڈ کی ادائیگی انہیں 2009 میںکی گئی ۔تین سال تاخیر سے ادائیگی کی صورت میں جب ڈسٹرکٹ اکاونٹس آفس گوجرانوالہ سے جی پی فنڈ کی رقم پر ان تین سالوں کے منافع کی درخواست کی تو انہوں نے صاف انکار کردیا۔ محتسب پنجاب خالد محمود نے کنسلٹنٹ محتسب آفس وزیر احمد قریشی کو معاملے کی انکوائری کا حکم دیا۔ وزیراحمد قریشی نے انکوائری کی توپتہ چلا کہ سرکاری ملازمین کے جی پی فنڈ کی بھاری رقوم حکومتی خزانہ میں موجود رہتی ہیں لیکن انہیں ادائیگی کے وقت تک کا منافع دینے کی بجائے ریٹائرمنٹ کے بعد صرف چھ ماہ تک کا منافع دیا جاتا ہے۔ محتسب پنجاب نے اکاو¿نٹنٹ جنرل پنجاب کو حکم دیا ہے کہ 2006 میں ریٹائر ہونے والے سینئر ہیڈماسٹر فتح محمد کو 2009 تک ان کی جی پی فنڈ کی رقم کا منافع فوری طور ادا کرکے محتسب آفس کو اطلاع کریں۔