سراج تیلی صاحب!سات سال باہر رہا‘ دوست ہوتے ہوئے بھی نہیں پوچھا؟

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی) وزیراعظم محمد نوازشریف نے کاروباری برادری کے ساتھ ملاقات میں طنز ومزاح سے بھی کام لیا اور ہلکے پھلکے انداز میں وہ باتیں بھی کہہ گئے جو سنجیدہ لہجہ میں کہنا ممکن نہیں ہوتی۔ ایک موقع پر جب ایف بی سی سی آئی کے سربراہ ملک زبیر نے کراچی کے ممتاز صنعت کار قاسم سراج تیلی کا نام لے کر کہا کہ جناب اب ملک کو ہماری ضرورت ہے اور ہمیں بھی حصہ ڈالنا چاہئے۔ اس پر وزیراعظم کہنے لگے جب میں ہال میں داخل ہوا تو عقبی نشستوں سے آپ (قاسم سراج تیلی) کو تلاش کرتے آیا ہوں اچھا آپ یہاں بیٹھے ہیں۔ میں سات سال باہر رہا لیکن دوست ہوتے ہوئے بھی انہوں نے نہیں پوچھا دوسرے افتخار ملک صاحب تھے جو سات سال نظر نہیں آئے۔ وزیراعظم نے وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا ذکر کیا اور کہا کہ وہ زیادہ کام کی وجہ سے بیمار ہوئے ہیں۔ وزیراعظم نے بزنس کونسل کا ذکر کیا اور کہا کہ اس میں آمنے سامنے بیٹھیں گے۔ سنیں گے بھی اور سنائیں گے بھی وزیراعظم اور کاروباری شخصیات کے ساتھ سیشن 3گھنٹے تک جاری رہا اور تاجروں نے وزیراعظم سے سوالات بھی دریافت کئے۔
سراج تیلی