بدین: مذہبی جذبات بھڑکانے کی سازش کا الزام، 3 ہندوئوں کا 3 روزہ ریمانڈ

کراچی (نیٹ نیوز) بدین میں مذہبی جذبات بھڑکانے اور فساد کرانے کی سازش کے الزام پولیس نے ہندو کمیونٹی کے تین افراد کا تین روز کا ریمانڈ حاصل کرلیا ہے۔ ویرسی کولھی، اشوک میگھواڑ اور نریش میگھواڑ کو سول جج اینڈ جوڈیشل مجسٹریٹ دوئم ماتلی کی عدالت میں پیش کیا گیا۔ دنبالو پولیس تھانے پر مولوی اکرام اللہ نے مقدمہ درج کرایا ہے، پیر سخی عثمان شاہ گاؤں کی مرکزی سڑک پر لوگوں نے ہولی کے رنگ سے مقدس نام تحریر دیکھا، جس سے ان کے مذہبی جذبات بھڑکے۔ مولوی اکرام کی درخواست پر مقدمہ درج کرکے ویرسی کولھی، اشوک میگھواڑ اور نریش میگھواڑ کو گرفتار کیا گیا تھا۔ اس توہین کی اطلاع پر علاقے میں صورتحال کشیدہ ہوگئی بڑی تعداد میں مذہبی جماعتوں کے کارکن جمع ہوگئے۔ جس کے بعد مذہبی جماعتوں کے رہنماؤں، مقامی علما اور پولیس حکام پر مشتمل کمیٹی بنائی گئی، جس نے تینوں افراد پر مقدمہ درج کرانے کا فیصلہ کیا، جن کے نام مولوی اکرام اللہ نے تجویز کئے۔ ایس ایچ او دنبالو پولیس شاہنواز خاصخیلی کا کہنا ہے کہ تحقیقات کے بعد مقدمے میں ملزموں کو نامزد کیا گیا، جب ان سے سوال کیا گیا کہ ان مبینہ ملزموں کی کسی نے شناخت کی یا کسی نے یہ عمل کرتے ہوئے دیکھا تھا تو ایس ایچ او اس کا جواب نہ دے سکے۔  بدین ضلع میں گزشتہ  چار ماہ میں اپنی نوعیت کا یہ دوسرا واقعہ ہے۔