” سرمایہ کاری“ میڈیا مبالغہ آرائی کر رہا ہے‘ بھاشا منصوبے پر جائزہ مشن بھیجا جائے: حفیظ شیخ

اسلام آباد (وقت نیوز/ نما ئندہ خصوصی / نیوز ایجنسیاں) ایشیائی ترقیاتی بینک کے وفد نے وفاقی وزیر پانی و بجلی احمد مختار سے ملاقات کی۔ وزیر پانی و بجلی نے کہا بھاشا، دیامیر ڈیم سے 4 ہزار 500 واٹ سستی بجلی پیدا ہو گی۔ منصوبے کے لئے زمین کی خریداری کا کام آئندہ سال مکمل ہو جائے گا۔ایشیائی ترقیاتی بینک دیامر بھاشا ڈیم کی تعمیر کیلئے فنڈز کی فراہمی میں بلاتاخیر معاونت فراہم کرنے والے بڑے ادارے کے فرائض سرانجام دے۔ ایشین ڈویلپمنٹ بورڈ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر مورین سیٹرس نے پاکستان میں مختلف منصوبوں کے حوالے سے جائزہ پیش کیا اور کہا دیامر بھاشا ڈیم منصوبے کو فنڈز کی فراہمی کیلئے بینک کا بورڈ آف ڈائریکٹرز کام کر رہا ہے۔ قبل ازیں چیئرمین واپڈا اور این ٹی ڈی سی کے منیجنگ ڈائریکٹر نے اپنے اپنے شعبوں کے حوالے سے بریفنگ دی۔ انہوں نے بتایا کہ 1479 میگا واٹ پن بجلی کے منصوبے زیر تعمیر ہیں جو 2016ءتک مکمل ہو جائیں گے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ کوٹری اور گھارو میں مقامی اور درآمدی کوئلے سے چلنے والے دو انرجی پارکس بنائے جائیں گے، جن میں سے ہر پارک کی پیداواری صلاحیت 2620 میگا واٹ ہوگی۔ ادھر آسٹریلیا کے سفیر ایکسل ویچ سے ملاقات میں احمد مختار نے کہا کہ پاکستان میں ہوا، پانی اور کوئلے سے بجلی پیدا کرنے کی گنجائش ہے۔ آسٹریلیا کے سرمایہ داروں کو ان سے فائدہ اٹھانا چاہئے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ پاکستان کو توانائی کی قلت کا سامنا ہے حکومت نے سستی بجلی پیدا کرنے کے لئے ’انرجی مکس‘ تبدیلی کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔ آسٹریلیا کے سفیر نے بتایا کہ آسٹریلیا کی مختلف کمپنیاں پہلے ہی پاکستان میں کام کر رہی ہیں۔ وہ پانی و بجلی کے بڑے منصوبوں کی بولی کے عمل میں حصہ لیں گی۔ علاوہ ازیں وزیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ کی سربراہی میں اقتصادی ٹیم نے اے ڈی پی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر مورن سیٹورس کی قیادت میں ایشیائی ترقیاتی بینک کے بورڈ آف ڈائریکٹر سے ملاقات کی۔ پاکستان کی معاشی، اقتصادی صورتحال سمیت دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ عبدالحفیظ شیخ نے حکومت کی 2008ءسے اب تک کی کارکردگی کے حوالے سے آگاہ کیا۔ انہوں نے کہا موجودہ حکومت کو درپیش مختلف چیلنجوں، سکیورٹی صورتحال، قدرتی آفات بشمول سیلاب کی صورتحال سے بہت مشکلات کا سامنا رہا تاہم حکومت نے معاشی صورتحال بہتر کرنے کے لئے اہم اقدامات کئے۔ میڈیا کی جانب سے غیرملکی سرمایہ کاری میں کمی کے حوالے سے مبالغہ آرائی کی جاتی ہے۔ اے ڈی بی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر مورن سیٹورس نے حکومت پاکستان کی کارکردگی کو سراہا۔ وزیر خزانہ نے اے ڈی بی سے دیامر بھاشا منصوبے کے لئے جائزہ مشن پاکستان بھیجنے کی درخواست کی۔