دفاع پاکستان کونسل کے کارواں کی جھلکیاں


o.... رحمن ملک کے بیان کی مذمت
o....دفاع پاکستان کارواں کے
 ساتھ پولیس کی بھاری نفری تعینات رہی
لاہور (سید عدنان فاروق) ٭دفاع پاکستان کارواں مسجد شہداءسے ساڑھے گیارہ بجے روانہ ہوا اورسوا سات بجے واہگہ پہنچا۔ مسجد شہدا سے مسافت ایک کی بجائے آٹھ گھنٹے میں طے ہوئی۔
٭دعوت کے باوجود دفاع پاکستان کونسل سے باہر کوئی جماعت کارواں میں شریک نہیں ہوئی۔
٭شرکاءکے شدید رش کی وجہ سے دور دور تک ہر طرف سر ہی سر نظر آرہے تھے۔
٭مولانا سمیع الحق اور حافظ سعید کے خطاب سے قبل شرکاءنے کھڑے ہوکر زبردست نعرے بازی کی۔
٭دفاع پاکستان کونسل کے کارواں میں مسجد شہداءکے سامنے سے پانچ جیب کترے رنگے ہاتھوں پکڑ ے گئے
٭کارواں میں شریک قائدین ٹرک پر سوار تھے اور بار بار ہاتھوں کی زنجیر بنا کر بھارت کو پسندیدہ ملک قرار دینے پر اپنے غم و غصہ کا اظہار کرتے رہے۔
٭واہگہ پہنچنے پر حافظ سعید کے حق میں نعرے لگائے گئے
٭مقررین نے رحمن ملک کے بھارت جاکر حافظ محمد سعید کے حوالہ سے دیے گئے بیانات کی شدید مذمت کی۔ دفاع پاکستان کارواں کے ساتھ پولےس کی بھاری نفری تعےنات تھی۔ اس موقع پر ڈی آئی جی آپرےشنز رائے طاہر، اےس اےس پی آپرےشنز سہےل سکھےرا، سی ٹی او لاہور سہےل چودھری سمےت دےگر افسر بھی موجود تھے۔ پولےس ناخوشگوار واقعہ سے نمٹنے کےلئے ڈنڈوں اور اسلحہ سے لےس تھی۔ مقررےن کے متعدد ساتھی بھی جدےد اسلحہ سے لےس نظر آئے۔ لاہور پولےس کے علاوہ اےلےٹ فورس، مجاہد سکواڈ اور خفےہ اداروں کے اہلکار سادہ کپڑوں مےں کارواں کے ساتھ ڈےوٹی دے رہے تھے۔ کارواں کے باعث ٹرےفک کا نظام درہم برہم ہوگےا۔