انتخابات ملتوی کرانے کیلئے حالات خراب کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے: منور حسن


لاہور (خصوصی نامہ نگار) امیر جماعت اسلامی سید منور حسن نے کہا ہے کہ قومی انتخابات کو ملتوی کرانے کے لئے ملکی حالات خراب کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ملک دشمن قوتیں حرکت میں آچکی ہیں گزشتہ روز کراچی اور اندرون سندھ کئی شہروں میں ہنگامے، ہڑتالیں، ہوائی فائرنگ اور پشاور ایئر پورٹ پر راکٹوں اور بموں کے حملے اسی سلسلے کی کڑی ہیں۔کراچی روانگی سے قبل منصورہ میں کارکنوں سے گفتگو کرتے ہوئے منور حسن نے کہا ہے کہ ایک تنظیم کراچی کی صورتحال کو، جو پہلے ہی بدامنی اور ٹارگٹ کلنگ کی وجہ سے خراب ہے، اسے مزید خراب کرنے پر تل گئی ہے۔ سپریم کورٹ کے نوٹس پر سیخ پا ہو کر کراچی سمیت پورے سندھ کے کئی شہروں میں مظاہروں، پر تشدد ہڑتال اور فائرنگ کے واقعات دہشت گردانہ ذہنیت کی عکاسی کرتے ہیں۔ ایم کیو ایم نے کراچی کے شہریوں کو ایک عرصے سے یرغمال بنا رکھا ہے۔ عدالت نے بجا طور پر الطاف حسین کی عدلیہ کے خلاف تقریر کا نوٹس لیتے ہوئے اسے توہین عدالت کا نوٹس جاری کیا ہے اس نوٹس کا آئینی طریقے سے جواب دینے کے بجائے، ایم کیو ایم جو اپنے آپ کو آئین سے بالا تر سمجھتی ہے اس نے حسب عادت دہشت گردی کا راستہ اختیار کیا ہے تاکہ عدالت کو مرعوب کیا جاسکے۔ ایم کیو ایم نے کراچی میں بوگس ووٹنگ کے لئے جعلی ووٹر لسٹیں اور اپنی پسند کی حلقہ بندیاں بنوائی ہیں۔ کراچی میں دھاندلی اور دھونس سے الیکشن جیتنے والوں کو اس بات کا خطرہ لاحق ہوگیا ہے کہ اس طرح ان کی چوری پکڑی جائے گی اور ان کے لئے الیکشن جیتنا مشکل ہوجائے گا۔