غیر ملکی طاقتیں پاکستان میں امن نہیں چاہتیں: سعد رفیق

لاہور(سٹاف رپورٹر) وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ غیر ملکی طاقتیں کسی صورت پاکستان میں امن نہیں چاہتیں اور مذاکرات کو تباہ کرنے کی بھرپور کوششیں کی جارہی ہیں حکومتی اور رابطہ کمیٹی کو مذاکرات کو کامیاب بنانے کےلئے بھرپور کوشش کرنی چاہیے معاشرے کے سپشل افراد اور بزرگوں کو کرایوں میں سبسڈی دینے پر غور کیا جارہا ہے پے اورپنشن نظام کی آٹومیشن کاکام پفرا کے تعاون سے شروع کردیا۔ پسنجر اور فریٹ سروس کی مکمل بحالی تک کوئی نئی مسافر ٹرین نہیں چلائی جائے گی کسی رکن قومی اسمبلی کو سفارش کرنے کی ضرورت نہیں، میں مکمل طور پر بے اختیار ہوں سارا کام مینجمنٹ کا ہے۔30 جون تک فریٹ کے لئے 40جبکہ آئندہ مالی سال کے دوران90سے 100انجن مخصوص کر کے ریلوے میں پسنجر اور فریٹ سروس کا توازن بحال کریںگے جبکہ ن لیگ کی حکومت روڈ کے مقابلے میں ریل سیکٹرمیں سرمایہ کاری کو بھی بڑھائے گی سیاسی سفارش پر کوئی بند سیکشن یا ٹرین بحال نہیں ہو گی یہ فیصلہ ریلوے مینجمنٹ کو کرنا ہے گذشتہ برس کی نسبت 3ارب کے زائداخراجات کے باوجود ریلوے خسارہ میں گذشتہ برس کی نسبت کمی آئے گی ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز ریلوے مغلپورہ ڈرائی پورٹ میں پہنچنے والی کنٹینر سپیشل ٹرین کے استقبال کے موقع پر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقع پرسینئر ریلوے افسران اورڈائریکٹر جنرل پبلک ریلیشن رﺅف طاہر ڈپٹی ڈائریکٹر محمد آصف بھی موجود تھے۔ خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ صحافیوں کو ٹرین کرایوں میں 80فیصد رعایت دے رہے ہیں جو زیادہ ہے لیکن ہم اسے کم نہیں کر رہے جبکہ عمر رسیدہ اور معذور لوگوں کو رعایت دینے سے متعلق بھی تجویز زیر غور ہے۔