ایل ڈی اے میں شامل ہونے کے باوجود رائےونڈ میں تجاوزات کی بھرمار

رائے ونڈ (نامہ نگار) رائیونڈ سٹی اور ویلیج کے لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی میں شامل ہونے کے باوجود یہاں غیر قانونی ہاﺅسنگ سکیموں، پلاٹوں، تجاوزات اور بغیر نقشہ تعمیرات میں کمی نہیں آسکی بلکہ بااثر شخصیات سیاسی وسرکاری آشیربادپرحسب سابق مذموم کارروائیوں میں مشغول ہیں ۔ رائیونڈ کی تمام رابطہ سڑکوں کے علاوہ میں بازار میں بااثر افراد نے سرکاری جگہ کو اپنی املاک میں شامل کر کے تہہ خانے اور چوبارے بنا رکھے ہیں، تجاوزات کی مد میں یہاں کے بااثر افراد ایک منظم مافیا کا روپ دھار چکے ہیں جنہوں نے سیاسی اور سرکاری پشت پناہی سے تجازوات کو غیر قانونی تحفظ دینے کو منافع بخش کاروبار بنا لیا ہے۔ پچھلے دور میں رائیونڈ کو ماڈل سٹی بنانے کیلئے 86 کروڑ روپے کی خطیر گرانٹ دی گئی لیکن کرپٹ مافیا کی ملی بھگت سے عام شہری کے گھر میں آج تک صاف پانی نہیں پہنچ سکا اور نہ ہی یہاں پر نکاسی¿ آب کے مسائل ختم ہوئے ہیں۔ اہل شہر نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ ایک بار خود اس مظلوم شہر کا خفیہ دورہ فرمائیں اور مسائل کا خود مشاہدہ کریں۔
رائےونڈ تجاوزات