سی ڈی اے ترقیاتی منصوبوں کی شفافیت جانچنے کیلئے 3 رکنی عدالتی کمشن تشکیل


اسلام آباد (وقائع نگار) اسلام آباد ہائی کورٹ نے سی ڈی اے کے اہم ترقےاتی منصوبوں کی شفافےت جانچنے کے لئے سپرےم کورٹ کے سابق جج کی سربراہی مےں تےن رکنی عدالتی کمےشن تشکےل دے دےا۔کمےشن تےن ماہ مےں اپنی رپورٹ پےش کرےگا۔ سی ڈی اے کمےشن کے سربراہ کو 30 لاکھ جبکہ ممبران کو دس دس لاکھ روپے فےس اداکرے گا۔ اسلام آباد ہائی کورٹ کے جج جسٹس شوکت عزےز صدےقی نے سی ڈی اے کے درجنوں منصوبوں کے حوالے سے پائے جانے والے تحفظات پر اےک اعلیٰ عدالتی کمےشن تشکےل دےنے کے احکامات جاری کےے ہےں۔ کمےشن کا سربراہ سپرےم کورٹ آف پاکستان کے جسٹس (ر) سردار رضاخان کو مقرر کےا گےا ہے جبکہ دو رےٹائرڈ سےشن ججز سخی محمد کہوٹ اور باقر علی رانا کو اس کمےشن کا ممبر بناےا گےا ہے۔ عدالتی کمےشن نومبر کے دوسرے ہفتے مےں اسلام آباد ہائی کو رٹ مےں ہی اپناکام شروع کرے گا۔ جسٹس شوکت عزےز صدےقی نے شاہد اکبر بنام چےف کمشنر اسلام آباد کے مقدمے مےں سی ڈی اے کے مذکورہ امور کی سماعت کی تھی۔ بعدازاں فاضل عدالت نے ان معاملات کی شفافےت کے حوالے سے تحقےقات کرنے کے لئے اےک عدالتی کمےشن تشکےل دےا ہے۔