بھگت سنگھ چوک نامنظور، اہلیان علاقہ نے نام حرمت رسول چوک رکھ دیا


 لاہور (خصوصی نامہ نگار) تحریک حرمت رسول میں شامل جماعتوں، شادمان مارکیٹ کے تاجروں اور اہل علاقہ کی بڑی تعداد نے فوارہ چوک شادمان کا نام بھگت سنگھ چوک رکھنے کی کوششوں کے خلاف فوارہ چوک شادمان میں زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا اور بھگت سنگھ چوک نامنظور نامنظور اور حرمت رسول پر جان بھی قربان ہے کے فلک شگاف نعرے لگائے ،اس موقع پر تحریک حرمت رسول کے کنوینئر مولانا امیر حمزہ ،انجمن تاجران شا مان کے صدر زاہد بٹ، تحریک حرمت رسول کے سیکرٹری جنرل قاری محمد یعقوب شیخ، شیعہ پولیٹکل پارٹی کے چیئرمین پیر نوبہار شاہ، تنظیم اسلامی کے مرکزی رہنما مرزا محمد ایوب بیگ، متحدہ جمعیت اہلحدیث کے مرکزی ناظم اطلاعات شیخ نعیم بادشاہ، جمعیت علماءپاکستان (نیازی گروپ) کے صوبائی صدر پیر اختر رسول قادری، پیر شفاعت رسول، پیر لیاقت علی، محمد یحییٰ مجاہد، عبدالوحید شاہ، علی عمران شاہین و دیگر نے مشترکہ طور پر فوارہ چوک شادمان میں حرمت رسول چوک کے بورڈ و بینرز لگائے اور متفقہ طور پر اس بات کا اعلان کیا کہ مذہبی وسیاسی جماعتوں ،شادمان مارکیٹ کے تاجروں اور اہلیان علاقہ نے فوارہ چوک کا نام حرمت رسول چوک رکھ دیا ہے اگر کسی نے لاکھوں مسلمانوں کے قاتل انڈیا کی خوشنودی کے لیے اس کا نام تبدیل کرنے کی کوشش کی مذہبی ، سیاسی ،سماجی وتاجر تنظیمیں متحد ہو کر زبردست تحریک چلائیں گے اور کلمہ طیبہ کے نام پر حاصل کیے گئے ملک میں اس قسم کی مذموم حرکتوں کو کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دیں گے ۔ احتجاجی مظاہرہ کے موقع پر دینی ،سیاسی و تاجر رہنماﺅں نے بھگت سنگھ چوک نام رکھنے کیخلاف مذمتی پلے کارڈز اور بینرز بھی اٹھا رکھے تھے ۔ تحریک حرمت رسول اور تاجر تنظیموں کے رہنماﺅں نے میڈیا سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مسلمانوں کے پاس اپنے ہیروز اور مشاہیر کی کوئی کمی نہیں ہے کہ ہم اپنے ملک میں چوکوں اور چوراہوں کے نام ہندوﺅں اور سکھوں کے نام پر رکھنا شروع کر دیں اور نہ ہی ہمارا دین اس بات کی اجازت دیتا ہے۔ حکمران انڈیا کی خوشنودی کیلئے فوارہ چوک شادمان کا نام بھگت سنگھ چوک رکھنے کی سازشیں کر رہے ہیں۔ بھگت سنگھ نام رکھنے کی کوششیںکرنے والوں کو تحریک آزادی میں قربانیاں پیش کرنے والے مسلمان کیوں نظر نہیں آتے ؟ انہوں نے کہا کہ شادمان چوک کا نام بھگت سنگھ چوک رکھنے کی کوششیں نظریہ پاکستان پر حملہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی ایجنڈے پر عمل پیرا لوگ سن لیں ! لاہور کے غیور رہائشی ایسے ناپسندیدہ فیصلوں کو کسی صورت تسلیم نہیں کریں گے۔