پاکستانی حکمرانوں ، اقوام متحدہ کی بے حسی کے باعث مسئلہ کشمیر زیرالتواء ہے، مقررین

لاہور (خصوصی نامہ نگار)جماعت اہلحدیث  کے زیر اہتمام عظیم الشان ’’کشمیر کانفرنس‘‘ کا انعقاد کیا گیا۔ کانفرنس کی صدارت امیر جماعت اہلحدیث حافظ عبدالغفار روپڑی نے کی۔ شرکاء سے الشیخ جمیل الرحمن ، رانا محمد نصر اللہ خاں،پروفیسر عبدالمجید، حافظ عبدالوہاب روپڑی، شکیل الرحمن ناصر، مولانا شاہد جانباز، مولانا زاہد ہاشمی، خلیل الرحمن خلجی سمیت دیگر جید علماء و رہنمائوں نے خطابات کئے۔ الشیخ جمیل الرحمن امیر تحریک المجاہدین نے کانفرنس کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اسلام دشمن قوتیں اپنے اختلافات بھلا کر ایک ہو گئی ہیں اور دینِ اسلام اور مسلمانوں کی جانوں کے دشمن ہو چکے ہیں۔ بھارت کی طویل بربریت ، اقوام متحدہ کی بے حسی، پاکستانی حکومتوں کی مجرمانہ نا اہلی، بڑی طاقتوں کے دوہرے معیار اور معاشی و سیاسی مفادات کی وجہ سے کشمیری بے بسی کی تصویر بنے آزادی کے منتظر ہیں۔ حافظ عبدالغفار روپڑی نے کہا کہ اس بات پر زور دیا کہ مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کیلئے بامعنی مذاکرات وقت کی اہم ترین ضرورت ہیں۔اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں کشمیریوں کی آزادی کے لیے اپنا کردار ادا کریں۔ رانا محمد نصر اللہ خاں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے اقوام متحدہ سمیت دیگر اداروں سے امیدیں وابستہ رکھنا دائمی خشک کنویں سے پانی کی امید لگانے کے مترادف ہے۔ اگر آج بھی مسلمان اللہ کے احکام اور رسول اللہﷺ کی تعلیمات پر عمل پیرا ہو جائیں تو ان کا کھویا ہوا وقار، آزادی اور تمکنت قائم ہو جائے گی ۔ مولانا شکیل الرحمن ناصر نے کہا کہ جب تک مسئلہ کشمیر حل نہیں ہو جاتا تب خطے میں امن کا قیام کسی بھی صورت ممکن نہیں۔