عراق : سیکورٹی فورسز اور جنگجوئوں میں جھڑپیں‘ کیپٹن سمیت 9 ہلاک 35 زخمی

بغداد (آئی این پی) عراق میں سیکورٹی فورسز اور القاعدہ کے جنگجوئوں کے درمیان جھڑپوں اور پرتشدد واقعات میں  فوج کے کیپٹن سمیت 9 افراد ہلاک اور 35 زخمی ہوگئے ۔محکمہ سلامتی کی صوبائی کونسل کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ شمال مغربی بابل کے علاقے الفارسیہ میں القاعدہ کے جنگجوئوں کے ساتھ  جھڑپوں میں فوج کاایک کیپٹن ہلاک جبکہ 31 اہلکار زخمی ہوگئے ،کاروائی میں 8 عسکریت پسند مارے گئے۔ کاروائی میں فوجی ہیلی کاپٹروں اور ٹینکوں کے ذریعے دہشت گردوں کے متعد د ٹھکانوں کو تباہ کردیا گیا ۔ دوسری جانب  صوبائی گورنر نے فلوجا پر قابض عسکریت پسندوں کو ایک ہفتے میں ہتھیار پھینکنے کی وارننگ دی ہے ۔ گورنر نے یہ وارننگ عسکریت پسندوں کے کئی ہفتوں پر پھیلے قبضے کو ختم کرانے کیلیے سرکاری افواج کی سست روی پر مبنی پیش قدمی کے بعد دی ہے۔گورنر نے عسکریت پسندوں کو ایک ہفتے کی مہلت دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہتھیار پھینکنے والوں کیلیے عام معافی ہو گی، تاہم حکومت آئی ایس آئی ایل کے ساتھ مذاکرات نہیں کرے گی کیونکہ یہ قاتل اور جرائم پیشہ لوگ ہیں۔واضح رہے فلوجا اور صوبہ انبار کا دارالحکومت رمادی گزشتہ کئی ہفتوں سے فورسز اور عسکریت پسندوں کے درمیان تصادم کا مرکز بنا ہوا ہے۔ رمادی اس سے پہلے سنی مزاحمت کا مرکز رہ چکا ہے۔