طالبان سے مذاکرات قوم کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف ہیں: حسین محی الدین

لاہور (خصوصی رپورٹر) پاکستان عوامی تحریک کی فیڈرل کونسل کے صدر ڈاکٹر حسین محی الدین القادری نے کہا ہے کہ سبز انقلاب ہر پاکستانی کے دروازے پر دستک دے رہا ہے۔ ہر فرد کو پرامن جدوجہد میں ڈاکٹر طاہرالقادری کا دست و بازو بننا ہو گا۔ مذاکرات کا عمل قوم سے مذاق اور آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف ہے۔ ایک ڈیڑھ ماہ کے اندر ’’مذاکرات‘‘ کا پول کھل جائے گا۔ منافع پر چلنے والے اداروں کو بھی بیچا جا رہا ہے اور مقتدر طبقہ اگلے سو سال تک اپنی نسلوں کا معاشی مستقبل محفوظ کرنا چاہتا ہے۔ بیچنے اور خریدنے والے خبردار رہیں۔ انقلاب کے بعد ان اداروں کو دوبارہ قومی تحویل میں لے لیا جائے گا۔ امن کے لئے قائم کردہ کمیٹیاں بے وقعت اور بے حیثیت ہیں۔ ان کے پاس اتھارٹی، مینڈیٹ  اور کلیرٹی نہیں ہے۔ ریاست کے مطالبات آئینی قانونی اور اخلاقی طور پر درست ہوتے ہیں مگر حکومت نے غیر ریاستی عناصر سے برابر کی سطح پر آ کر قوم کا سر شرم سے جھکا دیا ہے۔