افغان فوج بھی سکیورٹی معاہدہ نہ ہونے پر پریشان، کرزئی پر دبائوہے: امریکی اخبار

نیو یارک (نوائے وقت نیوز) افغان فوج میں امریکہ کے ساتھ سیکورٹی معاہدے کیلئے آوازیں اٹھنا شروع ہو گئیں، امریکی اخبار کے مطابق اعلیٰ افسروں نے صدر کرزئی کو دستخط نہ کرنے پر تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ امریکی اخبار کے مطابق افغان فوجی امریکہ سے معاہدہ نہ ہونے پر بے چینی میں مبتلا ہیں جنہیں یہ خوف ہے کہ غیر ملکی فوجی اور مدد حاصل نہ رہی تو طالبان دوبارہ قابض ہو جائیں گے اجازت نہ ہونے کے باوجود فوجی حکام صدر کرزئی کی پالیسی پر تنقید کر رہے ہیں اور انہوں نے برملا اپنے خدشات کا اظہار کیا ہے ۔گزشتہ ماہ افغان وزیر دفاع سے فیلڈ کمانڈر کی ملاقات میں بھی فوج میں پائے جانے والے جذبات سے آگاہ کیا گیا صوبہ زابل کے بٹالین کمانڈر کرنل محمد دوست نے کہا کہ ہر فوجی اسی پریشانی کا شکار ہے کہ طالبان دوبارہ قابض ہو جائیں گے ۔ ایک اور افسر کیپٹن عبدالظاہر نے کہا کہ معاہدہ نہ ہوا تو وہ صحرا میں اس بھیڑ کی مانند ہوں گے جو بھیڑیوں کے رحم و کرم پر ہو۔ دوسری جانب امریکی حکام کا کہنا ہے معاہدہ نہ ہوا تو غیر ملکی فوج کے چند ماہرین کا یہاں رہنا بھی مشکل ہو گا جس سے افغان فوج کا تربیتی عمل رک جائے گا۔