پنجاب اسمبلی اجلاس کی جھلکیاں

O  حکومتی رکن ثوبیہ شفیع کی طبیعت خراب
O  وزیراعلیٰ کی آمد پر شیر آیا، شیر آیا کے نعرے
O  حکومتی خواتین ارکان کی پی پی پی کی فائزہ ملک کے مؤقف کی حمایت
لاہور (فرخ سعید خواجہ+ احسن صدیق)
O… پنجاب اسمبلی کی حکومتی رکن ثوبیہ شفیع کی صوبائی اسمبلی کا اجلاس شروع ہونے سے تھوڑی دیر پہلے طبیعت خراب ہوگئی۔ انہیں حکومتی رکن اسمبلی ڈاکٹر فرزانہ نذیر نے دیکھا اور ہسپتال بھجوا دیا جہاں انکی حالت اب بہتر ہے۔
O… پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں مہمان خواتین کو ایوان کی اوپر والی منزل کی نشستوں پر بٹھانے کیلئے اجازت حاصل کرنے کیلئے وزیر قانون رانا ثناء اللہ نے قرارداد اسمبلی میں پیش کی جسے متفقہ طور پر منظور کرلیا گیا۔
O… کورم پورا کرنے کیلئے حکومتی پارٹی نے جن ارکان اسمبلی کی ڈیوٹی لگائی تھی ان میں صوبائی وزیر طاہر خلیل سندھو اور پارلیمانی سیکرٹری رانا محمد ارشد بہت فعال دکھائی دئیے۔ وزیراعلیٰ کی اسمبلی میں آمد سے پہلے ہی ایوان حکومتی ممبران سے بھر چکا تھا۔
O… اسمبلی کا اجلاس دیکھنے کیلئے حکومتی پارٹی کی رکن قومی اسمبلی بیگم تہمینہ دولتانہ آئیں۔ وہ اپنے صاحبزادے میاں عرفان دولتانہ ایم پی اے کے ساتھ پنجاب اسمبلی پہنچیں۔ حکومتی رکن حنا پرویز بٹ نے قرارداد پیش کی جس کے متن میں کہا گیا ہے کہ پنجاب اسمبلی کا یہ ایوان بین الاقوامی یوم خواتین کے موقع پر پاکستانی خواتین کو زندگی کے ہر شعبے میں اپنے حقوق کے حصول کو یقینی بنانے کی قابل تعریف کوششوں پر خراج تحسین پیش کرتا ہے۔ اس ضمن میں حکومت پنجاب کی خدمات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے۔ خواتین کی بدولت ہی خاندان مضبوط معاشرے اور بااختیار اقوام تعمیر ہوتی ہیں۔ حکومتی اور اپوزیشن بنچوں کی تکرار میں حکومتی بنچوں سے فرزانہ بٹ اور رخسانہ کوکب جبکہ اپوزیشن بنچوں سے سعدیہ سہیل نے بڑھ چڑھ کی حصہ لیا۔
O… آئی این پی کے مطابق پنجاب اسمبلی میں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی 100 کے قریب خواتین نے بھی ایوان کی کارروائی دیکھی خواتین کی اکثریت حکومت اور اپوزیشن کی لڑائی اور شور و غل سے تنگ آکر اٹھ کر چلی گئیں کہ ہمارے سر درد ہو رہے ہیں۔ اپوزیشن ارکان کی تقریروں کے دوران مسلم لیگ کی ڈاکٹر فرزانہ نذیر اور فرزانہ بٹ بار بار مداخلت کرتی رہیں، تحریک انصاف کے میاں اسلم اقبال نے مداخلت بند نہ کرنے پر وزیراعلیٰ شہبازشریف کی ایوان میں آمد میں تقریر کے دوران احتجاج کی بھی دھمکی دی۔ ڈپٹی سپیکر نے 7 بار دونوں خواتین کو ڈانٹا لیکن وہ باز نہ آئیں۔ حکومتی خواتین ارکان اسمبلی نے بھی پیپلزپارٹی کی رکن اسمبلی فائزہ ملک کے مؤقف کی حمایت کی اور ڈیسک بجا کر اظہار یکجہتی کی۔ اجلاس میں فائزہ ملک نے حکومتی اور اپوزیشن خواتین ارکان اسمبلی کو ترقیاتی فنڈز نہ ملنے اور اضلاع کی سطح پر ڈی سی سی کی کمیٹیوں میں نمائندگی نہ دئیے جانے پر احتجاج کیا تو حکومتی خواتین ارکان اسمبلی نے بھی ڈیسک بجا کر ان کے مؤقف کی تائید کی اور مطالبہ کیا کہ مخصوص نشستوں پر آنے والی خواتین ارکان اسمبلی کو بھی فنڈز دئیے جائیں۔
O… وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی پنجاب اسمبلی کے ایوان میں آمد پر حکومتی اراکین کا ڈیسک بجا کر اور ’’دیکھو دیکھو کون آیا‘‘ ’’شیر آیا‘‘ ’’شیر آیا‘‘ کے نعرے لگا کر استقبال کیا جبکہ شہباز شریف نے حکومتی اراکین کا ہاتھ ہلا کر شکریہ ادا کیا۔
O… تحریک انصاف کے رکن اسمبلی میاں اسلم اقبال نے ڈپٹی سپیکر سردار شیر علی گورچانی کو ’’یار‘‘ کہہ دیا، صوبائی وزیر قانون کے اعتراض پر ڈپٹی سپیکر نے میاں اسلم کو معافی دیدی۔
پنجاب اسمبلی/ جھلکیاں