قوانین بننے کے باوجود پاکستان میں خواتین کیخلاف تشدد میں کمی نہیں آئی : بی بی سی

اسلام آباد (بی بی سی ) پاکستان میں حقوق نسواں کے کارکنوں اور قانون سازوں کے مطابق جمہوریت کے تسلسل سے خواتین کے بعض دیرینہ مسائل پر قوانین تو بنے ہیں مگر ان پر عملدرآمد نہ ہونے کی وجہ سے خواتین کے خلاف تشدد کے واقعات اور امتیازی سلوک میں کوئی کمی نہیں آئی۔ پاکستان کمیشن برائے انسانی حقوق کی رہنما زہرہ یوسف کہتی ہیں پاکستان میں جمہوریت کے پچھلے چھ برسوں میں قوانین کے حقوق کے میدان میں جو واحد پیش رفت ہوئی ہے وہ بعض معاملات پر قانون سازی ہے۔