عارفوالا: پراسرار بیماری سے محنت کش کے 6 بچے معذور، ماں ذہنی توازن کھو بیٹھی

عارفوالا (نامہ نگار) غریب محنت کش کے گھر پراسرار بیماری نے ڈیرے ڈال لئے، بیماری میں مبتلا 6 بچوں کا مناسب علاج نہ ہونے کی وجہ سے ماں ذہنی توازن کھو بیٹھی۔ باپ بچوں کے علاج کیلئے گھر کی جمع پونجی فروخت کر کے حکومتی امداد کے منتظر نواحی گائوں 62/E.B کے رہائشی محمد اشرف کے 5 بیٹے 28 سالہ جاوید، 26 سالہ عابد، 23 سالہ ساجد، 21 سالہ آصف، 19 سالہ عمران اور 24 سالہ بیٹی ساجدہ یکے بعد دیگرے پراسرار بیماری کا شکار ہوکر نچلا دھڑ مفلوج ہونے کی وجہ سے اپاہجوں جیسی زندگی بسر کرنے پر مجبور ہوگئے۔ بیٹی کی شادی بیمار ہونے سے پہلے کنجوانی میں اشرف نامی نوجوان سے کردی تھی جو کنجوانی میں اسی بیماری کا شکار ہوگئی جس پر اسکے شوہر نے اسے طلاق دیکر والدین کے گھر واپس بھیج دیا۔ اولاد کی بیماری سے پریشان انکی والدہ 8 سال قبل ذہنی توازن کھو بیٹھی ہے۔ محمد اشرف نے وزیراعلیٰ پنجاب سے اپیل کی کے اسکے 6 معذور بچوں کا علاج سرکار سطح پر کرایا جائے۔ اس سلسلے میں گائوں کے رہائشی الطاف حسین ایڈووکیٹ نے صحافیوں کو بتایا کہ میں نے بیماری کے بارے میں مقامی ٹی ایچ کیو ہسپتال کو مطلع کیا کہ ڈاکٹروں کی ٹیم نے مریضوں کا معانہ کرکے انکے علاج معالجہ کی زحمت گوارہ نہ کی۔