پاکستان سنجیدگی سے چاہے تو ڈرون حملے رکوا سکتا ہے: ایاز وزیر

اسلام آباد (نوائے وقت رپورٹ) سابق سفیر اور وزارت خارجہ کے افغان ڈیسک کے سابق انچارج ایاز وزیر نے کہا ہے کہ ڈرون حملے اصولی طور پر درست نہیں، پاکستان اگر سنجیدگی سے چاہے تو ڈرون حملے رکوا سکتا ہے۔ اگر بھارت افغانستان میں اپنی فوجیں لائے گا تو وہ اپنی قبر کھودے گا۔ طالبان سے مذاکرات قبائلیوں کی مرضی اور روایات کے مطابق کرنا ہونگے۔ نجی ٹی وی سے انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ احمد مسعود اور ملا عمر میں مصالحت کرانے کی ذمہ داری نواز شریف نے مجھے سونپی تھی۔ افغان صدر ربانی نے نواز شریف کو طالبان سے مصالحت کی راہ نکالنے کیلئے کہا تھا۔ شمالی اتحاد اور طالبان کی جنگ میں مرنے والے مسلمان ہی تھے۔ شمالی اتحاد اور طالبان ایک دوسرے کے ساتھ نماز نہیں پڑھتے تھے۔ کابل کو روسیوں نے اتنا تباہ نہیں کیا جتنا افغان گروپوں کی لڑائی نے کیا۔ طالبان نے امریکہ سے اسامہ بن لادن کے خلاف ثبوت پیش کرنے کیلئے کہا۔ ایک امریکی افسر کا کہنا تھا کہ امریکہ نے جو شواہد پیش کئے تھے ان کی بنیاد پر امریکہ میں مقدمہ نہیں چل سکتا۔

ایاز وزیر