تحریک انصاف ڈرون حملوں کیخلاف احتجاج ختم کردے: خورشید شاہ

سکھر (آن لائن) قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے ایک بار پھر کہا ہے کہ تحریک انصاف اب ڈرون حملوں کے خلاف را ستہ بند کر نے کا احتجاج ختم کردے، اس سے فیڈریشن کو خطرات لاحق ہوجائیں گے۔ آج ایک صوبائی حکومت نے ایسا کیا ہے کل سندھ بھی پنجاب کے خلاف راستہ بند کردیگا جو وفاق کیلئے خطرناک چیلنج ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے روہڑی میں فنکشنل لیگ سکھر ڈویژن کے صدر سید اجمل حسین شاہ سمیت دیگر عہدےداروں کی پیپلز پارٹی میں شمولیت کے موقع پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ خورشید شاہ نے مزید کہا کہ احتجاج ایک یا دو دن ہونا چاہئے، باقی پارلیمنٹ ہے، اگر وہ نہ ہو تو پھر سڑکوں پر احتجاج کرنا چاہئے۔ ہم نے حکومت سے کہا ہے کہ وہ ان ڈرون حملوں کے خلاف یو این او میں جائے اور قرارداد پیش کر ے۔ انکا کہنا تھا کہ احتجاج کا مقصد دنیا کو پیغام دینا تھا باقی کام حکومت کا ہے، پولیس کی طرح کام کرنا ہمارا کام نہیں۔ انہوں نے کہا کہ نیب کا کوئی معاملہ کھٹائی میں نہیں پڑا ہے۔ چیئرمین چھٹی پر گئے ہیں انکے خلاف کیس پہلے کا ہے۔ بلدیاتی الیکشن نیا چیف الیکشن کرائیگا۔ میاں صاحب غیرملکی دورے کریں مگر اتنے بھی نہ کریں کہ وہ ہمیں ہی بھول جائیں اور پاکستان واپس آئیں تو ایسا لگے کہ وہ دورے پر یہاں آئے ہیں۔ طالبان سے مذاکرات کیلئے ہم حکو مت کیساتھ ہیں اور انکو یقین دلا چکے ہیں کہ اپوزیشن انکے ساتھ ہے، انکا کہنا تھا کہ ایران معاہدے سے پاکستان کو فائدہ ہوگا، ایران سے کاروبار اور تجارت کو وسعت دی جانی چاہئے۔ علاوہ ازیں نجی ٹی وی سے گفتگو میں خورشید شاہ نے کہا کہ انہوں نے بھی حکیم اللہ محسود کی موت کے بعد اے پی سی کا مطالبہ کیا تھا لیکن جب حکومت اپنے اتحادی مولانا فضل الرحمن کی نہیں سن رہی تو کیا ہوسکتا ہے۔
خورشید شاہ