اسرائیل: عدالت نے خاتون کو بیٹے کے ختنہ سے انکار پر سینکڑوں ڈالر جرمانہ کر دیا

مقبوضہ بیت المقدس (آئی این پی) اسرائیل میں یہودی مذہب کی ایک عدالت نے خاتون کو اپنے شیر خوار بیٹے کا ختنہ کرانے سے انکار کرنے پر سینکڑوں ڈالرز کا جرمانہ کر دیا گیا اور تاخیر کی صورت میں روزانہ کی بنیاد پر جرمانے کا فیصلہ بھی سنا دیا گیا۔ عدالت نے فیصلہ دیا ہے کہ ختنہ بچے کی فلاح کےلئے ضروری ہے اور خاتون نے جس دن سے اس کا ختنہ کروانے سے انکار کیا ہے ہر دن کا 150 ڈالر جرمانہ لازماً ادا کرنا پڑے گا۔ خاتون نے عدالت کو بتایا کہ ختنے کرانا ان کے بیٹے کےلئے جسمانی طور پر خطرناک ہو گا۔ یاد رہے کہ اسرائیل میں ختنہ سے متعلق کوئی قانون موجود نہیں ہے لیکن یہودیوں کی اکثریت یہودی مذہب کے مطابق ختنہ کرواتی ہے اور فیصلے کو اسرائیل کی سپریم کورٹ میں چلنج کئے جانے کا امکان ہے۔
ختنہ سے انکار